امیر ترین خطے میں ہم غریب ترین لوگ رہتے ہیں, امجد حسین ایڈووکیٹ

گلگت(ارسلان علی)پاکستان پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کے صوبائی صدر امجد حسین ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان پورا متنازعہ نہیں ہے بلکہ آدھا حصہ متنازعہ ہے اور آدھا غیر متنازعہ ہے ،جو متنازعہ ہے وہ ضلع گلگت ،ضلع استور اور بلتستان ڈویژن کے چاروں اضلاع متنازعہ ہے کیوں کہ یہ علاقے جموں اینڈ کشمیر سٹیٹ کے حصہ رہے ہیں جبکہ ضلع دیامر ،ہنزہ اور نگر اس سٹیٹ کے حصہ نہیں رہے ہیں۔ جمعرات کے روز پونیال سٹوڈنٹس ویلفیئر آرگنائزیشن (PSWO)کے زیر اہتمام قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی سے فارغ ہونے والوں کے لئے الوداعی اور نئے آنے والوں کے لئے رکھی گئی ویلکم کی تقریب میں بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان کا مستقبل روشن ہے صرف شرط یہ ہے کہ گلگت بلتستان کا نوجوان اپنے قوت ارادی پر قائم رہے اور گلگت بلتستان میں بہت سے وسائل ہیں جو ہمارے نوجوان تعلیمی اداروں سے فارغ ہو کر نکل رہے ہیں/ نوجوانوں کو مایوس ہونے کی ضرورت نہیں ہے میں اس بات کی گارنٹی دیتا ہوں اس علاقے میں اب میرٹ چلے گا اب کوئی کرپشن نہیں ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان لسانی بنیاد پرایک نہیں ہوسکتا ہے کیوں کہ ہر ضلع کا الگ کلچر اور الگ ثقافت ہے ۔گلگت بلتستان میں 3قسم کے نظریات کام کررہے ہیں پہلے نظریہ کے مطابق ہمارے کچھ لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ ہمارا کوئی الگ حیثیت نہیں وفاق جو چاہتے اور جب چاہے جیسا چاہے جتنا چاہے چلاسکتا ہے اور دوسرا نظریہ کے مطابق کچھ لوگ الگ ریاست قائم کرنا ہے اور اپنا مستقبل کا فیصلہ اس ریاست میں بیٹھ کرکرنا ہے اور تیسرا نظریہ جو ہے وہ ہمارا ہے جس کے مطابق ہم جس ملک کے ساتھ وابستہ ہے ان کے ساتھ رہنا ہے اور اس سسٹم میں جانا ہے اور اپنے حقوق کے لئے جد و جہد کرنا ہے ۔

انہوں نےقوم پرستوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ قوم پرست اپنے آپ کو منتازعہ سمجھتے ہیں لیکن پاکستان کا گلگت بلتستان میں وجود پر اعتراز نہیں بلکہ گلگت بلتستان کا پاکستان میں وجود پر اعتراز ہے ۔پاکستان کا گلگت بلتستان میں وجود سے پاکستان کو کوئی نقصان نہیں کیوں کہ وہ تمام وسائل لے رہا ہے اور ہمارا پاکستان میں وجود نہیں ہونے سے ہمیں شدید نقصانات کا سامنا ہے ۔ گلگت بلتستان وسائل سے مالا مال ہے۔ ایشین ڈیولپمنٹ بنک کے مطابق گلگت بلتستان پاکستان کا اکنامی ہے اور اس امیر ترین خطے میں ہم غریب ترین لوگ رہتے ہیں جس کا بنیادی وجہ ہمیں اپنی اہمیت کا پتہ نہیں ہے اور ہمارا ویژن کلیئر نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے اور اس ملک کے دشمنوں کا ہماری اس یوتھ میں انفلونس شروع ہوچکا ہے۔انہوں نے کہا کہ انڈیا نے جموں وکشمیر کو آئینی تحفظ دی ہے جس کی وجہ سے جموں اینڈ کشمیر کے لوگ انڈین اسمبلی کے حصہ بنے جس کی وجہ سے جموع اینڈ کشمیر کے وسائل کی بندر بانٹ نہیں ہورہی ہے اور آزاد کشمیر کو بھی آئینی تحفظ حاصل ہے جس کی وجہ سے وہاں کے وسائل کا بندر بانٹ نہیں ہورہاہے جبکہ ہمارا مسئلہ ابھی تک تصفیہ طلب ہے اور ہمارا مطالبہ یہ ہے کہ اگر گلگت بلتستان متنازعہ ہے توآئینی تحفظ فراہم کرے اور اگر متنازعہ نہیں ہے تو فل فلیج صوبہ بنایا جائے۔ ہم اسے متنازعہ خطہ کہنے والوں کوکہتے ہیں کہ انڈیا جموں اینڈ کشمیر کو آئینی صوبہ بنا سکتا ہے تو گلگت بلتستان کو پاکستان کیوں نہیں بنا سکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ متنازعہ حیثیت جو ہوتی ہے وہ انسانی کی نہیں بلکہ زمین متنازعہ ہوتا ہے۔ اگر گلگت بلتستان کا علاقہ متنازعہ ہے تو یہاں سے سی پیک کیسے گزررہاہے یہ ہمیں متنازعہ کہنے والی بات صرف یہاں کے وسائل پر قبضہ کرنا ہے اور کچھ نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم جو حاکمیت کی بات کرتے ہیں اس کا مطلب ہے اختیار گلگت بلتستان کے لوگوں کا ہو ، انتظامیہ سربراہ چیف سیکریٹری بھی مقامی ہوگا اور آئی جی پی بھی مقامی ہونا چاہیے۔ ہم جو ملکیت کی بات کرتے ہیں اس کا مطلب ہم پانی ،زمین اور معدنیات کے اوپر ملکیت چاہتے ہیں اور اس کا تحفظ پاکستان کا قانون دیں جس سے ہم اپنے غربت ختم کرسکے۔

تقریب سے خطاب کر تے ہوئے PPHIضلع گلگت، غذر اور ہنزہ و نگر کے سپورٹ منیجر محمد حنیف نے کہا کہ اس وقت ہر طرف تعلیم کی بات کی جاتی ہے لیکن تربیت کی کہیں بات نہیں کی جاتی ہے جس کی وجہ سے آئے روز معاشرے میں خودکشیوں اور دیگر مسائل بڑھ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ضلع غذر میں گزشتہ ایک ہفتہ میں 6سے زائد خود سوزیاں انتہائی افسوس ناک ہے۔ اس سارے مسئلہ کا حل نوجوانوں کے پاس ہے اور اس معاشرے کو نوجوان ہی تبدیل کرسکتا ہے اور کوئی آ کے نہیں بدلے گا ۔

ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان گلگت بلتستان کے کوآرڈینیٹر اسرارالدین اسرار نے طلباء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے نوجوان اچھی راہ پر چل رہے ہیں اور ایک مہذب معاشرے کی طرف گامزن ہے جس سے ہمیں خوشی محسوس ہورہی ہے اور ان کا مستقبل بہت روشن ہے اور خواتین کو مردوں کے مقابلہ میں آگے آکر کام کرنے کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ طلبہ و طالبات کو اپنے پڑھائی اور مثبت سرگرمیوں پر زوردینے کی ضرورت ہے۔

تقریب کے اختتام پر نمایاں پوزیشن حاصل کرنے والےا سٹوڈنٹس میں انعامات بھی تقسیم کئے گئے ۔اس سے قبل طلبہ و طالبات نے معاشرتی مسائل پر ٹیبلوز بھی پیش کئے اور لوکل دھن پر رقص بھی پیش کیا جس سے حاضرین محضوض ہوگئے ۔تقریب میں پونیال سے تعلق رکھے والے اور قراقرم انٹر نیشنل سے فارغ التحصیل اور زیر تعلیم طلبہ و طالبات نے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔

Sharing is caring!

About admin

Daily Mountain Pass Gilgit Baltistan providing latest authentic News. Mountain GB published Epaper too.

14 comments

  1. Remarkable! Its actually amazing piece of writing,
    I have got much clear idea on the topic of from this piece
    of writing.

  2. Keep this going please, great job!

  3. Great blog here! Also your web site a lot up very fast!
    What host are you the usage of? Can I get your associate
    hyperlink in your host? I wish my site loaded up as quickly as yours lol

  4. Amazing! Its really remarkable piece of writing, I have got much
    clear idea regarding from this post.

  5. This is really attention-grabbing, You are an overly skilled blogger.
    I’ve joined your feed and sit up for in search of more of your fantastic post.
    Additionally, I have shared your website in my
    social networks

  6. I was wondering if you ever considered changing the layout of your site?

    Its very well written; I love what youve got to say.
    But maybe you could a little more in the way of content so
    people could connect with it better. Youve got an awful lot
    of text for only having one or two images. Maybe you could space it out better?

  7. This piece of writing offers clear idea in favor of the new people of blogging,
    that actually how to do blogging and site-building.

  8. I needed to thank you for this very good read!! I certainly loved every bit of it.
    I have you book marked to look at new things you post…

  9. Have you ever considered about including a little bit
    more than just your articles? I mean, what you say is fundamental and everything.

    But imagine if you added some great images or video clips to give your
    posts more, “pop”! Your content is excellent but with pics and videos, this website
    could undeniably be one of the greatest in its niche. Superb blog!

  10. Quality articles is the important to interest the visitors
    to go to see the web site, that’s what this site is providing.

  11. It’s remarkable to visit this website and reading the views of all colleagues concerning this paragraph,
    while I am also keen of getting experience.

  12. I loved as much as you will receive carried out right here.
    The sketch is attractive, your authored subject matter stylish.
    nonetheless, you command get got an edginess over that you wish
    be delivering the following. unwell unquestionably come more formerly
    again since exactly the same nearly a lot often inside case you shield
    this increase.

  13. Thank you for sharing your thoughts. I really appreciate
    your efforts and I am waiting for your next post thanks once again.

  14. Hi to all, the contents existing at this web page are genuinely amazing for people experience, well, keep up the good work fellows.

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.